عمران خان کا مستقبل وزیراعظم نہیں اصغرخان جیسا ہوگا: بلاول بھٹو زرداری

چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹوزرداری کا کہنا ہے کہ عمران خان نے پرویز مشرف کے ساتھ مل کر جمہوریت کے خلاف سازش کی تھی ان کا مستقبل وزیراعظم نہیں بلکہ اصغرخان جیسا ہوگا۔
ٹنڈو محمد خان میں دیوالی کی تقریب میں شرکت کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹوزرداری کا کہنا تھا کہ پائیدار جمہوریت کے لئے احتساب نہایت ضروری ہے، نوازشریف و دیگر پر فرد جرم عائد ہونے سے جمہوریت کمزور نہیں ہوگی اور نا ہی یہ جمہوریت کے خلاف کوئی سازش ہے نوازشریف اور ان کے خاندان کے افراد کو چاہئے کہ خود پر لگے الزامات کا جواب دیں اور عدالتوں کا سامنا کریں۔
ان کا کہنا تھا کہ میرے وزیراعظم بننے کے لئے آئین میں ترمیم کی کوئی ضرورت نہیں پڑے گی جو قومی اسمبلی کا رکن بن سکتا ہے وہ وزیراعظم بھی بن سکتا ہے۔
چیرمین پیپلزپارٹی کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی کو بھی بیرونی فنڈنگ ملی ہے اور اس فنڈنگ میں اسرائیل کا بھی نام ہے، پی ٹی آئی کے بانی رہنما اکبر ایس بابر کہہ چکے کہ عمران خان نے بھارت سے فنڈ لئے، عمران خان کا مستقبل وزیراعظم بننا نہیں بلکہ ان کا حال اصغر خان جیسا ہوگا۔
ان کا کہنا تھا کہ خیبرپختونخوا وزراخود کہتے ہیں کہ صوبائی بجٹ سےعمران کا بجٹ چلتا ہے، تحریک انصاف کی رہنما عائشہ گلا لئی کے بیان نے ثابت کردیا کہ چیرمین پی ٹی آئی خواتین کے بھی خلاف ہیں، افسوس کی بات ہے کہ کے پی میں خواتین کی تذلیل کا بل پاس ہوا۔
بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ کسی سے ذاتی اختلاف نہیں لیکن عمران خان نے ہرموقع پر جمہوریت کے خلاف اقدامات اٹھائے ہمارا ان سے نظریاتی اختلاف ہے، انہوں نےپرویز مشرف کے ساتھ مل کر بھی جمہوریت کے خلاف سازش کی تھی جب کہ 2014 میں جمہوریت پر حملہ ہوا تو عمران خان سب سے آگے تھے۔
Advertisements

آئندہ انتخابات آراوز کے نہیں ہوں گے،پیپلزپارٹی کل بھی طاقت تھی اور آج بھی ہے:آصف علی زرداری

لاہور: سابق صدر و پاکستان پیپلزپارٹی پارلیمینٹیرینز کے صدر آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ پیپلزپارٹی کل بھی طاقت تھی اور آج بھی قوت ہے، آئندہ انتخابات آراوز کے انتخابات نہیں ہوں گے, سب کو پتا چل جائے گا کہ عوام کی صرف ایک ہی پارٹی پاکستان پیپلزپارٹی ہے۔
جمعرات کو اس امر کا اظہار آصف علی زرداری نے بلاول ہائوس لاہور میں لاہور ڈویژن سے پارٹی کے ٹکٹ ہولڈرز سے ملاقات میں کیا۔ سید یوسف رضا گیلانی، راجہ پرویز اشرف، میاں منظور وٹو، چوہدری منظور اور دیگر رہنما بھی اس موقع پرموجود تھے ۔ سابق صدر نے پارٹی کے ٹکٹ ہولڈرز سے ان کے حلقوں کے حالات کے بارے میں دریافت کیا۔
آصف علی زداری نے پارٹی رہنمائوں کو ہدایت کی کہ وہ انتخابات کی زورو شور سے تیاریاں شروع کریں، یونین کونسل اور پولنگ اسٹیشن تک پارٹی کو منظم کریں اور ابھی سے پولنگ ایجنٹوں کی تربیت کرنا شروع کریں۔ آصف علی زردری نے کا کہ آئندہ انتخابات میں بھرپور طریقے سے حصہ لینا ہے اور پولنگ کے ختم ہونے تک اپنا کام جاری رکھنا ہے۔ آصف علیزرداری نے کہا کہ چیئرمین بلاول بھٹو زرداری میدان میں آچکے ہیں۔ پیپلزپارٹی نے نوجوانوں کو نوجوان قیادت دی ہے۔
سابق صدر نے کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی کل بھی طاقت تھی اور آج بھی قوت ہے۔ پیپلزپارٹی جیسے جانثار اور دلیر کارکن کسی اور پارٹی میں نہیں ہیں اور یہ کارکن ہی ہمارا اثاثہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ انتخابات آراوز کے انتخابات نہیں ہوں گے اور سب کو پتہ چل جائے گا کہ عوام کی صرف ایک ہی پارٹی پاکستان پیپلزپارٹی ہے۔
صدر آصف علی زرداری نے کہا کہ چیئرمین بلاول بھٹو زرداری ملک کے کونے کونے کا دورہ کریں گے اور پارٹی کارکنوں سے ملاقاتیں کریں گے۔اس کے علاوہ سابق صدر آصف علی زرداری سے پیر آف تونسہ شریف خواجہ عطااللہ خان تونسوی نے بھی ملاقات کی جبکہ سوات سے تعلق رکھنے والے سابق صوبائی وزیر دوست محمد خان اورسوات کے مسلم لیگ(ن) کے روحیل امین نے بھی ملاقات کرکے پاکستان پیپلز پارٹی میں شمولیت کا اعلان کیا۔
اس موقع پر سابق ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی حاجی نواز کھوکھر بھی موجود تھے۔

مسلم لیگ (ن) کے دوست محمد خان کی پیپلز پارٹی میں شمو لیت

پیپلز پارٹی پارلیمنٹرین کے صدر و سابق صدر مملکت آصف علی زرداری نے خیبر پختون خواہ سے مسلم لیگ (ن) کی ایک اور وکٹ گرادی ہے اور (ن) لیگ کے سابق رکن قومی اسمبلی دوست محمد خان پیپلز پارٹی میں شامل ہوگئے ہیں ۔ اس سلسلے میں دوست محمد خان نے سابق صدرآصف علی زرداری سے گزشتہ روز بلاول ہاؤس میں ملاقات کر کے پیپلز پارٹی میں شمولیت کا اعلان کیا ہے۔ اس موقع پر سابق وزیراعظم راجہ پرویز ا شرف بھی موجودتھے۔ دریں اثناء پیر خواجہ عطاتونسوی شریف نے بھی سابق صدر سے ملاقات کی ہے اس موقع پر سابق وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی بھی موجود تھے۔ سابق صدر آصف علی زرداری نے گفتگو کر تے ہوئے کہا کہ پیپلزپارٹی جیسے جانثاراوردلیر کارکن پارٹی کا اثاثہ ہیں، بلاول بھٹو زرداری ملک کے کونے کونے کا دورہ کریں گے،پیپلزپارٹی کل بھی طاقت تھی اور آج بھی قوت ہے، جیالے انتخابات کی زورو شورسے تیاریاں شروع کریں،سب کو پتاچل جائیگا کہ عوام کی صرف ایک ہی پارٹی پیپلزپارٹی ہے۔ انہوں نے کہا کہ آیندہ انتخابات آراوز کے انتخابات نہیں ہوں گے، یونین کونسل اور پولنگ اسٹیشن تک پارٹی کو منظم کیا جائے، پولنگ ایجنٹوں کی ابھی سے تربیت کرنا شروع کریں، آیندہ انتخابات میں بھرپور طریقے سے حصہ لینا ہے۔ اس موقع پر ٓصف زرداری سے پیر آف تونسہ شریف خواجہ عطاء اللہ تونسوی نے بھی ملاقات کی ۔

Imran’s dream of becoming prime minister will never come true: Bilawal

Pakistan Peoples Party (PPP) Chairman Bilawal Bhutto Zardari has said that Pakistan Tehreek-e-Insaf (PTI) chief Imran Khan conspired against democracy by becoming an accomplice of military ruler Pervez Musharraf and will face similar fate as that of Asghar Khan.

Speaking at a Diwali ceremony in Tando Mohammad Khan, a district of southern Sindh, on Thursday, he said Imran would never become the prime minister as he is destined to become the next Asghar Khan in Pakistan’s history, he said.

Bilawal said his party has ideological differences with the PTI chief, who, he said, never shies away from taking anti-democratic steps, citing the 2014 protest sit-in against the elected government – referring to the PML-N rule.

He claimed the PTI had received foreign funding from India and Israel referring to confessional statements of Akbar S Babar, one of the founding members of PTI, who parted ways with it.

The PPP chairman also criticised Imran for being ‘anti-women’, saying Ayesha Gulalai’s statements have proved misogynistic behaviours within the party. The PTI lawmaker Gulalai had accused the cricket-star-turned-politician of sexual harassment.

Commenting over today’s indictment of ousted prime minister Nawaz Sharif, his daughter Maryam and son-in-law Captain (retd) Mohammad Safdar by an accountability court, Bilawal said accountability process was necessary for durable democracy and the court’s decision will neither weaken democracy nor is a conspiracy against it.

The PPP leader advised Nawaz and his family to face the court cases and respond to allegations levelled against them. He added that there were no Constitutional amendments needed for him to become the prime minister of the country as anyone who can become an MNA can become the premier also.

To make Pakistan a true liberal, democratic and developed country.