#KhidmatMainSabSayAagaySindh: Text of speech of Chairman PPP Bilawal Bhutto Zardari at Khipro

IMG_20180331_192231

بسم اللہ الرحمن رحیم
السلام علیکم ،
ساتھیو!
آج میں نے یہاں اچھڑے تھر میں) (240 کلو میٹرلمبی پانی کی پائپ لائن کا افتتاح کیاہے۔
سانگھڑ کے پسماندہ ترین علاقے کے لوگ جو صدیوں سے پیاسے تھے اور اپنی پیاس بجھانے کیلئے ،بارش کی دعائیں مانگا کرتے تھے اور پھر بارش کے پانی کو جمع کر کے اپنی اور اپنے بچوں کی پیاس بجھاتے تھے۔
آج میرے لیے اس سے زیادہ خوشی کاکوئی لمحہ نہیں کہ ،
”اچھڑے تھر جا منھنجا ماروئڑا ، ائیں جھانگیئڑا،ھاٹی پیاسا نہ رھندا ”
ساتھیو!
ؓنون لیگ اور ان کے اتحادی ہوںیا پاکستان تحریک انصاف ان نام نہاد بڑی پارٹیوں نے پچھلے پانچ سال صرف اپنی ذاتی لڑائی میں گذار دیئے۔
گالی اور الزامات کی سیاست کی کرسی کی لڑائی میں لڑتے رہے ،انہوں نے عوام کیلئے کچھ نہیں کیا ،عوامی مسائل پر بات تک نہیں کی ،عوام کے مسائل حل کرنے کیلئے نہ ان کہ پاس کوئی منشور ہے اور نہ ہی وہ صلاحیت ہے ۔
مگر ہم پچھلے پانچ سالوں سے عوام کی خدمت کر رہے ہیں ،ہم عوام کے بنیادی مسائل حل کرنے میں لگے ہوئے ہیں ۔
عوام کے بنیادی مسائل کیا ہیں ؟
تعلیم ،صحت ، روزگار ،اور صاف پانی یہ ہیں عوام کے اصل مسائل جن پر ہم نے کام کیا ۔
ہم نے تعلیم کے میدان میں کام کیا ،نئی یونیورسٹیزبنائیں،میڈیکل کالجز بنائے،چھوٹے شہروں میں یونیورسٹی کیمپسز بنائے ،اسکول جانے والی بچیوں کی تعلیم کیلئے انہیں وظائف دیے جارہے ہیں ،اسی طرح صحت کے شعبے میں بھی بہت کام ہوا ہے۔کراچی میں شہید محترمہ بے نظیر بھٹو ٹراما سینٹر بنایا ۔
پاکستان کا سب ہے بڑا بچوں کا Emergency Response Center (ERC)بنایا ۔
کینسر جیسے مرض کے علاج کیلئے پاکستان کی پہلی Cyber Knife Machineلگائی ،اس علاج پر دینا بھر میں (50)سے (60)لاکھ روپے خرچ ہوتے ہیں ،مگر سندھ میں اس سے بالکل مفت علاج کیا جاتا ہے ۔
دل کے علاج کیلئے کراچی کے بعد ،لاڑکانو ،ٹنڈو محمد خان ، سیہون ،اور سکھر میں عالمی معیار کے پانچ بڑے ہسپتال بنائے ،جہاں بالکل مفت علاج ہوتا ہے ۔
Liver transplantکے لیے خیرپور کی تحصیل گمبٹ میں ایک State of the Art ہسپتال بنایا ہے جہاں بالکل مفت علاج ہوتا ہے ،یہ بہت مہنگے علاج ہیں جو غریبوں کی پہنچ سے بہت دور تھے،مگر آپ کی حکومت نے پاکستان پیپلز پارٹی کی حکومت نے انہیں بالکل مفت کر دیا ہے ۔غربت پورے ملک کا مسئلہ ہے ،نون لیگ حکومت کی غریب دشمن پالیسیز کی وجہ سے ،امیر امیر تر اور غریب غریب تر ہوتا جارہا ہے ،روزگار کے وسائل نہ ہونے سے غربت بڑھتی جارہی ہے،غربت کم کرنے کیلئے سندھ حکومت نے غریب عورتوں کو بلا سود قرضے دئیے تاکہ وہ اپنا ذاتی کاروبار کر سکیں ،اس پروگرام کے تحت ہم نے (6)لاکھ خاندانوں کو غربت سے باہر نکالااور اسے وسیع پیمانے پر پھیلا رہے ہیں ۔
ساتھیو!
آپ جانتے ہیں کہ پانی انسان کی سب سے بنیادی ضرورت ہے ،اور ہم آج سے نہیں ،کسی سوموٹو کی وجہ سے نہیں ،بلکہ پچھلے (10)سال سے اس پر کام کر رہے ہیں ،پورا ملک پانی کی کمی کا شکار ہے مگر سندھ سب سے زیادہ متاثر ہے ،سندھ کو نہ صرف پینے کا پانی بلکہ زراعت کیلئے بھی پانی کی کمی کا سامنا ہے ۔
وفاق اور IRSA، سندھ کو اپنے پانی کے حق کیلئے ترسا رہا ہے ،IRSAسندھ کو اپنے حصے کا پانی نہیں دے رہا (1991)کا Water Accord، جس پر بھی ہمارے تحفظات تھے مگر ظلم تو یہ ہے کہ آج اس Water Accord پر بھی عمل نہیں کیا جارہا، جب یہ Accordبنا تب بھی نون لیگ کی حکومت تھی اور آج بھی نون لیگ کی حکومت ہے اورجب بھی نواز شریف اقتدار میں ہوتا ہے تو عوام کو پیاسا رکھتا ہے ۔
لاہورمیں پھول تو اگ جاتے ہیں ،لیکن عوام کو پینے کہ لیے پانی نہیں ملتا ،مگر ہم پاکستان کو پیاسا نہیں چھوڑینگے ،جو پانی ہمیں ملتا ہے اسے بچانے کہ لیے ہم نے نہروں اور کینالز کو پکا کیا،
Water Coursesکو پکا کیا ،شاخوں کو پکا کیا ۔
صرف سانگھڑ میں ہم نے پچھلے پانچ سال میں (23)شاخوں کو پکا کر کے ہزاروں ایکڑ بنجر زمین کو آباد کیا لوگوں کو پینے کا صاف پانی مہیا کرنے کیلئے پورے سندھ میں (1700)R.O Plantsلگائے اور آج ہم نے اس اچھڑے تھر کے بنجر ریگستان میں(240)کلومیٹر لمبی پانی کی پائپ لائن بچھا دی ہے ۔
ہماری پوری کوشش ہے کہ نہ آپ اور نہ آپ کے بچے پیاسے رہیں ،نہ آپ کی زمین اور نہ ہی آپ کے جانور ۔
ساتھیو!
ہم نے بہت کچھ کیا ہے ،مگر میں یہ نہیں کہتا کہ سب (100)فیصد ٹھیک ہو گیا ہے ،بہت مسائل آج بھی ہیں مگر ہماری محنت اور ہماری نیت پر شک نہیں کیا جا سکتا ۔
ہمیں عوام کے مسائل کا علم ہے اور ہم ان کا حال بھی جانتے ہیں ،ہم عوامی سیاست کرتے ہیں ،ہم عوام کیلئے سیاست کرتے ہیں اور سندھ میں اگر اتنے سال میں کوئی کام ہوا ہے تو وہ صرف پاکستان پیپلز پارٹی نے کیا ہے ،یہاں ہر کامیاب منصوبے کی بنیاد ہم نے ڈالی ،آپ کسی بھی پتھرکو اٹھا کر دیکھ لیں تو اس کی بنیاد میں پاکستان پیپلز پارٹی ہی نظر آئے گی،نون لیگ ہو یا فنکشنل لیگ ان سب کی سوچ اینٹی عوام ہے ۔
ملک کے یہ غیر مقبول لوگ، مسلم لیگ کے مردہ گھوڑے کو زندہ کرنے کی کوشش کرتے ہیں اور پاکستان کی عوام ہر بار پاکستان پیپلز پارٹی کی شکل میں مزاحمت کرتے ہیں ،سانگھڑپکار پکار کر کہہ رہا ہے کہ اسے تباہ کرنے والا کوئی اور نہیں بلکہ فنکشنل لیگ ہے ،جنہوں نے پچاس (50)سال سانگھڑ میں حکومت کی ،وہ تو آج بھی وفاق میں نون لیگ کے ساتھ ہیں ،انہوں نے آپ کیلئے کیا کیا ؟
پاکستان پیپلز پارٹی کو تو ابھی سانگھڑ میں حکومت ملی ہے ،اس سے پہلے سانگھڑ میں فنکشنل لیگ نے کیا
کیا ؟یہ جو آج ,Not So Grand Dysfunctional Allianceسیاسی یتیموں کا ٹولہ ادھر اُدھر پھر رہا ہے ،یہ سارے کے سارے وہ لوگ ہیں جو کبھی وزیر اعلیٰ رہے ، وزیر اور مشیر رہے ،کبھی بادشاہ تو کبھی بادشاہ گر رہے ،ان کو توگھوٹکی کے الیکشن میں لگ پتا گیا کے عوام میں ان کی کیا عزت ہے ،گھوٹکی کی عوام نے ان کو ان کی حیثیت دکھا دی اور اپنا فیصلہ سنا دیا ہے۔
نہ پیر جو نہ میر جو فیصلو ضمیر جو ووٹ بے نظیر جو نشان اتھو تیر جو ۔
میں پوچھتا ہوں فنکشنل لیگ نے سانگھڑ کیلئے کیا کیا؟ شھدادپور کیلئے کیا کیا؟کھپرو کیلئے کیا کیا؟ ٹنڈو آدم کیلئے کیا کیا ؟
انہوں نے ہمیشہ سانگھڑ کو اپنی جاگیراور اس کی عوام کو اپنا غلام سمجھا ۔
پچھلے پچاس سالوں میں انہوں نے آپ کو دیاکیا ؟ آپ کو آپ کے بچوں کو اندھیرے میں رکھا ،محرومی میں رکھا ،غربت میں رکھا ،بھوکا اور پیاسا رکھا مگر اپنی جیب اپنے پیٹ اور اپنے گھر بھرتے رہے ، فنکشنل لیگ نے تو سانگھڑ کو پیاسا اور لاوارث چھوڑ دیا تھا ، مگر پاکستان پیپلز پارٹی نے یہاں
Water Supply Schemeشروع کی ۔
میں�آ پ سے پوچھتا ہوں بتاؤ سانگھڑ سے میرپور خاص روڈ کی بنیاد کس نے رکھی ؟
سانگھڑ نواب شاہ روڈ کس نے بنایا ؟
خیبر سے سانگھڑ تک روڈ کس نے دیا؟
ٹنڈو آدم سے کنڈیار ی روڈ کس نے بنایا؟
شہید محترمہ بے نظیر یونیورسٹی سانگھڑمیں کس نے بنائی ؟
ساتھیو!
ہم صوفی ازم کے ماننے والے ہیں ،ہم تمام مزارات کا احترام کرتے ہیں مگر ہمیں سیاست کو پیری مریدی سے الگ کرنا ہوگا ،بڑی بڑی باتیں تو سب کر لیتے ہیں مگر جس نے خدمت کی ہے،جس نے قربانی دی ہے ،جس نے خون دیا ہے وہ میرے نانا شہید ذوالفقار علی بھٹو تھے میری ماں شہید محترمہ بے نظیر بھٹو تھی اور میں ان کی اولاد ہوں میرے ناناشہید ذوالفقار علی بھٹو پر سانگھڑ میں حملہ ہو امگر نہ وہ ڈرے اور نہ ہم ڈرنے والے ہیں ،کیونکہ سانگھڑ عوام کا ہے کسی کی جاگیر نہیں ،ہم نے آپ کا ساتھ نہیں چھوڑا اور نہ ہی یہاں کی عوام سے اپنا ناطہ توڑا۔
بھٹو شہید کا نواسہ اور بی بی شہید کا بیٹا آج آپ سے وعدہ کرتا ہے کہ میں بھی کبھی آپ کا ساتھ نہیں چھوڑونگا ،میں مانتا ہوں کہ سب کچھ ٹھیک نہیں ہوا ابھی اور بہت کام کرنا ہے،
ہمیں ابھی آپ کی اور خدمت کرنی ہے یہاں پر عالمی معیار کا ہسپتال بنانا ہے ،جہاں بالکل مفت علاج ہوگا ،عوام کو بنیادی سہولتیں فراہم کرنی ہیں ۔
ساتھیو!
عوام کو اس سے کوئی غرض نہیں کہ کس کو کیوں نکالا گیا ،عوام اپنے مسائل کا حل چاہتی ہے ،عوام تعلیم چاہتی ہے ،عوام صحت چاہتی ہے ،عوام روزگار چاہتی ہے ،عوام خوشحالی چاہتی ہے ،عوام روٹی کپڑا اور مکان چاہتی ہے ،عوام روشن مستقبل چاہتی ہے اور وہ روشن مستقبل صرف پاکستان پیپلز پارٹی ہی دے سکتی ہے
جب وفاق میں پاکستان پیپلز پارٹی کی حکومت آئی تو اس وقت ملک کے حالات بہتر نہیں تھے ،آمریت کی وجہ سے صوبوں اور وفاق میں بہت دوریاں تھیں ،دہشتگردی کی وجہ سے امن و امان کا بہت بڑا مسئلہ در پیش تھا معاشی بدحالی تھی مگر ہم نے ان تمام مسائل پر قابو پانے کیلئے پارلیمان کو اعتماد میں لیا ،سیاسی پارٹیوں سے مشاورت کی اور متفقہ اٹھارویں آئینی ترمیم کی۔ اٹھارویں ترمیم وہ قانون ہے جس نے صوبائی خود مختاری کو یقینی بنایا ،وفاق کی طاقت نچلی سطح پر منتقل کی ،بنیادی حقوق کی Outreachکو وسیع کیا اور صوبوں کو پہلی بار مالی، سیاسی اور انتظامی طور پر مضبوط کیا اور اپنے وسائل کی مالکی دی ،ہمارا یہ
ما ننا ہے کہ مستحکم صوبے ہی مضبوط وفاق کی علامت ہیں ۔
آج کل نون لیگ اٹھارویں ترمیم پر حملے کر رہی ہے،اٹھارویں ترمیم کے تحت جو اختیارات صوبوں کو منتقل کیے تھے انہیں واپس لینے کی بھی سازش کر رہے ہیں ،انہوں نے تو پانچ سال میں NFC Awardتک نہیں دیا ،میں انہیں یہ بتاتا چلوں کہ پاکستان پیپلز پارٹی اٹھارویں ترمیم پر حملہ برداشت نہیں کریگی ۔
شہید محترمہ بے نظیر بھٹو کی (30)سالہ سیاسی جدوجہد کا مقصد (1993)کے آئین کی اصل حالت میں بحالی تھی اور ہم نے اٹھارویں ترمیم کے ذریعے ان کے مقصد کو پورا کیا ۔
آپ بتائیں ہم کس طرح اس پر حملے برداشت کرینگے۔
ساتھیو!
پاکستان پیپلز پارٹی کی وفاقی حکومت نے بینظیر انکم سپورٹ پروگرام جیسے انقلابی پروگرام کا آغاز کیا لیکن نون لیگ کو یہ پروگرام اس لیے پسند نہیں کیونکہ یہ پروگرام شہید بی بی کے نام پرہے ، اور یہ شہید بی بی کا ویژن تھا ،اس کے کارڈز پر شہید محترمہ بے نظیر بھٹو کی تصویر لگی ہے اور کیونکہ اس پروگرام کے تحت غریب ترین عورتوں کی مدد ہوتی ہے اسی لیے وہ غریب عورتوں کو دیے گئے کارڈزکینسل کر رہے ہیں اور ان کا حق مار رہے ہیں ۔
سن لو نون لیگ والو، تم نے بینظیر انکم سپورٹ پروگرام پر سے شہید بی بی کی تصویر تو ہٹادی مگر لوگوں کے دلوں سے کیسے نکالو گے؟ میں آپ سے پوچھتا ہوں کیا غریب عورتوں کا حق مارنا جائز ہے؟ کیا فضول پروگرام ہے؟ کیابینظیر انکم سپورٹ پروگرام عوام کی فلاح کا پروگرام نہیں؟
نو ن لیگ پتا نہیں کونسی دنیامیں رہتی ہے جو ان کو لگتا ہے کہ غر بت دیرینہ مسئلہ نہیں ہے ، یہ کیسے سوچتے ہیں کہ غربت مسئلہ نہیں؟ ہمارے یہاں لوگ غربت کی وجہ سے خودکشی کر رہے ہیں غذائی کمی کی وجہ سے لوگ بیماریوں کا شکار ہیں ،بچے معذور پیدا ہوتے ہیں بچوں کی شرح اموات دنیا میں کئی ممالک سے زیادہ ہے ،مجھے تو یہ سب حقائق دیکھ کر رات کو نیند نہیں آتی ۔
میں تو یہ سوچتا ہوں کہ کیا ان کا ضمیر مر گیا ہے ؟کیا انہیں خدا کا خوف نہیں ؟
کیا یہ نہیں جانتے کہ غریبوں کی مدد کرنا ہمارا فرض ہے؟ان کے پاس امیروں کے قرضے معاف کرنے کی تو طاقت ہے مگر غریبوں کی امداد کرنے کی سکت نہیں یہ امیروں کو
Tax Amnesty Scheme تو دے سکتے ہیں مگر غریبوں کو دو وقت کی روٹی نہیں ،ان کے پاس میٹرو بس بنانے کیلئے تو اربوں روپے ہیں مگر یہ غریب ترین عورتوں کے بینظیر انکم سپورٹ پروگرام کارڈ کینسل کر رہے ہیں۔
میں یہ برداشت نہیں کرونگا ،میں غریبوں کی تذلیل نہیں ہونے دونگا ،میرا ضمیر مجھے جھنجھوڑتا ہے ۔
چاہے وفاق میں بینظیر انکم سپورٹ پروگرام ہو یا سندھ حکومت کا غربت کم کرنے کا پروگرام ۔ پاکستان پیپلز پارٹی تو غربت سے لڑتی رہیگی لیکن یہ ظالم حکمران انہوں نے غربت نہیں غریب مٹانے کا فیصلہ کیا ہے ۔
ساتھیو!
آج میں سانگھڑ میں صاف پانی دینے آیا ہوں لیکن آپ کے پاس تو جلسہ بنتا ہے۔
میں پھر سانگھڑ آؤنگا جلسہ کرونگا،الیکشن آنے والا ہے یہ الیکشن ہم بھرپور تیاری سے لڑینگے ،ہم ایک مکمل منشور کے ساتھ یہ ا لیکشن لڑینگے۔
ہمارا منشورکسان دوست منشور ہے
ہمارا منشور مزدور دوست منشور ہے
ہمارا منشور غریب دوست منشور ہے
ہمارا منشور عوام دوست منشور ہے
سیاستدانو،میڈیا والو سن لوکہ خلق خدا کیا چاہتی ہے ۔
مانگ رہا ہے ہر انسان روٹی کپڑا اور مکان ،علم صحت سب کو کام اور میں یہ منشور لیکر آپ سے ووٹ مانگنے
آؤنگا ،مجھے آپ کی طاقت چاہیے مجھے عوام کی طاقت چاہیے ۔
میں آپ سے وعدہ کرتا ہوں کہ میں کبھی آپ کا ساتھ نہیں چھوڑونگا اور میں یہ جانتا ہوں کہ سانگھڑ کی عوام مجھے کبھی مایوس نہیں کریگی ،
نہ پیر جو نہ میر جو ووٹ بے نظیر جو ۔Text of
Advertisements

#KhidmatMainSabSayAagaySindh: Bilawal Bhutto Zardari inaugurates mega project to provide clean water from Nara Canal to 85 villages of barren Achro Thar

KHIPRO, March 31: Chairman Pakistan Peoples Party Bilawal Bhutto Zardari inaugurated Shaheed Mohtarma Benazir Bhutto Fresh Water Project to provide drinking water from Nara Canal to 85 villages of Achro Thar in Sanghar District on Saturday.
Under the project completed by Sindh government, 240 kilometers main pipeline & enroute lines have been laid to ensure water supply to the 85 villages dotting the dry desert. CM Murad Ali Shah, Ministers, PPP Sindh President Nisar Khuhro, PPP MNA from Sanghar Shazia Marri & others were present on the occasion.
Addressing the Party workers and notables of Sanghar after the inaugural, the PPP Chairman said, “I have just inaugurated a 240 kilometers long pipeline to provide drinking water to the thirsty masses of the backward area Achro Thar of Sanghar who had been praying for rain since centuries to quench their thirst.”
He said that for him there could be no better moment of happiness today that from now on my people in Achro Thar won’t remain thirsty. In the last five years, the so-called big parties PMLN or its allies and PTI have been indulging in personal fighting throwing accusations and insults on each other for the sake of chair but never talked about people’s problem.
Bilawal Bhutto Zardari said that PPP had been serving the masses since last five years spending its energies on solutions of basic issues. “We worked on Education, Health, employment and clean water. We built new varsities, colleges, extended stipends to school-going girls, he added.
PPP Chairman pointed out that Sindh has excelled in provision of health facilities, which includes construction of Shaheed Mohtarma Benazir Bhutto Trauma Center in Karachi, biggest Emergency Response Center for children, and Pakistan’s first Cyber Knife technology machine to conduct free of cost cancer radio surgery, which normally costs Rs6 million. “After NICVD Karachi, hospitals of international standards have been established in Larkana, Tando Mohammad Khan, Sehwan and Sukkur to provide free of cost otherwise very costly cardiovascular treatments. A state of the art Liver transplant center has been built in Gambat, a tehsil of Khairpur district where liver transplantation is carried out free of cost and facility is available to every Pakistani citizen,” he added.
Bilawal Bhutto Zardari said that these are very costly medical treatments, unaffordable for the poor but PPP government has made available these treatments without charges. He stated that poverty in the country is due to the anti-poor policies of PML-N government.
PPP government, he said, extended interest-free loans to poor women so that they can start their own small business and so far 600,000 families have benefitted from this Union Council-based programme
Bilawal Bhutto Zardari said that entire country has been suffering from water scarcity since 10 years and Sindh had been the worst affected for both drinking and agriculture water. “And during all these years we have been working on clean water not due to any suo moto,” he stated adding that Sindh is craving for its water share. IRSA and Federal Government are not providing its share in water. Sindh had reservations over 1991 Water Accord signed during PML-N but this too is not being implemented, he stated.
PPP Chairman pointed out that it was no more a secret that Nawaz Sharif keeps people thirsty whenever he is into power. He has water for flowers in Lahore but won’t give it to people to drink.
He said that Sindh government carried out lining up of water courses & canals to save available water and in Sanghar alone, lining of 23 distributaries was carried out in last five years and irrigated 1000s of acres barren land additionally while 1700 RO Plants were installed in entire Sindh.
“I don’t say that everything is 100% correct but our hard work and intentions cannot be put to doubt. We know the problems of people and do people’s politics. Only PPP has served Sindh and gave mega projects to the province,” he stated.
Bilawal Bhutto Zardari said that PMLN or PML-F, they are anti-people. People always resist them in the shape of PPP. Sanghar is crying that it has been devastated by PML-F, which is still an ally of PMLN in Federal government and has ruled Sanghar for last 50 years.
He called GDA as Grand Dysfunctional Alliance and termed it as a gang of political orphans. These people remained CMs, Ministers, Advisors and sometimes king-makers but did nothing for Sanghar. “PML-F always considered Sanghar as its Jagir and people as slaves. They did nothing for Sanghar, Khipro, TandoAdam, and Shahdadpur and kept people in darkness and fattening their coffers.
Bilawal Bhutto Zardari said that PPP launched Water Supply Scheme in Sanghar. PPP constructed Sanghar-Mirpurkhas Road, Sanghar-Nawabshah Road, Khyber-Sanghar Road, Tando Adam-Kandiari Road, and Shaheed Mohtarma Benazir Bhutto University in Sanghar.
He said that we are Sufis and revere all the shrines but we have to segregate politics from Piri-Mureedi. Everybody can make big talks but the ones who gave sacrifice and blood was Shaheed Zulfikar Ali Bhutto and Shaheed Mohtarma Benazir Bhutto. Like them, I would also not leave you alone.
He said that PPP passed landmark 18th Amendment unanimously from the Parliament after consultations with political parties and ensured provincial autonomy. “PPP won’t tolerate attacks on 18th Amendment and conspiracies against NFC Award,” the PPP Chairman added.
Bilawal Bhutto further said that PPP started revolutionary Benazir Income Support Programme (BISP). But PML-N dislikes it because it is named after Bibi and carries her picture. They are cancelling BISP Card for it helps poorest women. “Don’t know which world PML-N dwells in, because they think poverty is not an issue. People are facing malnutrition, diseases and committing suicides. We have higher child mortality rate. Looking at these issues, I cannot sleep well but their conscience appears dead.
“PML-N has powers to write-off loans of rich. It can launch Tax Amnesty Scheme for riches people but have nothing to feed poor. They have billions to build metro buses but are canceling BISP cards of the poor women,” he added.
Bilawal Bhutto Zardari made it clear that he cannot see poor being insulted and won’t tolerate it. “Whether BISP in Center or Sindh government’s poverty reduction programme in Sindh, PPP would continue battling poverty and PML-N’s policy to eliminate poor.”