PPP rejects increase in petroleum prices

saleem-mandviwalla_400

Islamabad, 28 February 2017: Former Finance Minister and PPP Senator Salim Mandviwala rejecting increase in petroleum prices by Nawaz government said that PML-N government has failed in collecting revenue and now increasing petroleum prices every fortnightly to fill in the shortfall in revenue collection.
In a statement issued by the PPP Media Office Islamabad Senator Mandviwala said the government is faced with 200 billion rupees shortfall in revenue by this time and further 200 billion shortfall is expected before the end of current fiscal year. The country is facing economic crisis due to the economic policies of Nawaz government, he said.
Senator Mandviwala said that government is relying on privatization and increase in petroleum prices to overcome losses in revenue collection and now government is planning to auction three big airports for the same purpose. This is a government which is auctioning national assets whereas good governments increase their national assets, he claimed. Prices of daily used items will increase by the increase in petroleum prices and people will suffer immensely, he concluded.

سی پیک کی بنیاد ہم نے رکھی اور یہ زیادہ تربلوچستان اور خیبرپختونخوا کے لئے تھا: زرداری

حب: پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری کا کہنا ہے کہ نوازشریف جب سے حکومت میں آئےہیں ان کی سوچ چھوٹی ہو گئی ہے اور چھوٹی سوچ والوں سے بڑی غلطیاں ہوتی ہیں۔
بلوچستان کے علاقے حب میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے سابق صدر کا کہنا تھا کہ سی پیک کی بنیاد ہم نے رکھی اور پیپلز پارٹی کا سی پیک منصوبہ زیادہ تربلوچستان اور خیبرپختونخوا کے لئے تھا ہمارا پروگرام تھا کہ جنگ کے باعث متاثر ہونے والےعلاقوں میں کام کیاجائے لیکن افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ ہمارے جانے کے بعد بلوچستان میں کوئی خاص تبدیلی نہیں آئی، صوبے کے لئے پیکیج کے اعلان کئے گئے لیکن کچھ نظر نہیں آ رہا ہم نے اس صوبے کو جہاں چھوڑا تھا آج بھی وہیں کھڑا ہے، بلوچستان کے زخموں کو ابھی بھی بھرنے کی ضرورت ہے اور یہاں کے مسائل سب کو مل کر حل کرنا ہوں گے۔ لوگوں کو تقسیم کرکے ملک مضبوط نہیں ہوسکتا۔
آصف زرداری کا کہنا تھا کہ تاریخ میں کبھی ایسا نہیں ہوا کہ کسی نے رضاکارانہ طور پر صدارت کا عہدہ چھوڑا ہو لیکن میں نے یہ سب کرکے دکھایا اور اپنے دور اقتدار میں بھی اپنے تمام اختیارات پارلیمنٹ کے حوالے کئے۔ کچھ دوست مصیبت میں آزمائے جاتے ہیں اور کچھ اختیارات ملنے کے بعد۔ نوازشریف جب سے حکومت میں آئے ہیں ان کی سوچ چھوٹی ہوگئی ہے اور چھوٹی سوچ والوں سے اکثر بڑی غلطیاں ہوجاتی ہیں، 4 سال سے جس کا وزیرخارجہ نہ ہو اس حکومت کے بارے میں کیا کہا جا سکتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ لوگ شیر کے شکار کی بات کرتے ہیں میں نے کبھی تیتر کا بھی شکار نہیں کیا، کچھ لوگوں کی کم عقلی کی وجہ سےبڑے مسائل بہت سی بڑی غلطیاں ہوجاتی ہیں جنہیں درست کرنے میں صدیاں لگ جاتی ہیں۔
سابق صدر نے کہا کہ سب کو علم ہے کہ بھارت افغانستان میں بیٹھا ہوا ہے اور اگر وہ افغانستان میں نہ ہوتا تو ہمارے خلاف اتنی شدت نہ آتی لیکن حکومت بھارتی مداخلت کے خلاف عالمی فورمز پر رجوع کرنے میں ناکام رہی ہے اور نوازشریف بھی یہ نہیں سمجھتے کہ ایسے مسائل پر دنیا کی طاقتوں سے رجوع کرنے کی ضرورت ہوتی ہے۔
پاکستان سپر لیگ کے فائنل کے لاہور میں ہونے کے حوالے سے سابق صدر کا کہنا تھا کہ کرکٹ میرا پسندیدہ کھیل نہیں جب کہ پی ایس ایل فائنل لاہور میں ہونا خطرے سے خالی نہیں اس میچ کے ذریعے نوازشریف پبلک شو کرنا چاہتے ہیں۔

Sufism is our first defence against terrorism: Bilawal Bhutto Zardari

Pakistan Peoples Party Chairman Bilawal Bhutto Zardari on Monday said that Sufism is the country’s first line of defence against terrorism.

He was addressing the inaugural session of the Jhirk Mullan Katyar bridge, which connects Tando Mohammad Khan to Thatta.

“Our first line of defence against extremism is sufism and its message of peace, and it will be beneficial for us if we were to add its message to our curriculum,” Bilawal said in answer to a question about adding Lal Shahbaz Qalandar’s ideology to the Sindh curriculum.

On his hopes regarding the result of the Panamagate case, Bilawal said, “History tells us that there has never been a court verdict against the Sharifs before, which tells us that we should not be too hopeful, but we are waiting for it nonetheless.”

On a question about Asif Ali Zardari’s announcement that both him and Bilawal would join Parliament soon, Bilawal said, “We are waiting for the Supreme Court’s verdict [regarding Panamagate] and then our political strategy would also be announced.”

The longest bridge built on the Indus

Built at a cost of Rs4.02 billion, Jhirk Mullan Katyar is the longest bridge to be built over the Indus river.

It is the second project completed under a public-private partnership, while the Hyderabad-Mirpur Khas road was the first.

Sindh Chief Minister Murad Ali Shah, who was also present at the inauguration, said, “We have associated the bridge with Sir Aga Khan because the first jamaat khana was created in Jhirk city.”jamaat khana was created in Jhirk city.”

“The Sindh government is working to create a sustainable infrastructure in the province as well as provide proper employment and schools for the people of the province,” the CM told the attendees of the inaugural session. (DAWN)