PPP to launch aggressive election campaign‏ in NA 122 and PP 147

DSC_1120
Mian Manzoor Ahmed Wattoo, President PPP Punjab, while addressing the press conference here today regretted the appointment of Punjab government officers as Returning Officers by the Election Commission of Pakistan despite the demand of the opposition parties to appointment Judicial Officers to ensure fair, transparent and impartial forthcoming by-elections and local bodies elections.

It is not possible to hold free and fair elections under the supervision of Punjab Government officers because they are highly politicized and will be eagerly willing to do the bidding of the ruling Party, he added.

He pointed out that development schemes were being executed which were funded by the development funds of MNAs and MPAs to influence the voters which were glaring violation of the code of conduct. It is pre-poll rigging by any measure, he stated.

He recalled that the ECP during PPP watch banned all such activities six months prior to elections and it was enforced in letter and spirit by the Commission.

Referring to the Kissan Package he said it was a “fake package” which was too little and too late adding its timing clearly manifested the government’s intention of securing political mileage in favor of the riling Party.

He argued that the aggressive publicity campaign in the media of the Kissan Package left no room of the tainted intention of the government.

He again appreciated the decision of the ECP for the deployment of the Rangers and the army personnel during the by-elections adding that it should be done so in the local bodies elections to ensure smooth polling at the polling stations.

While commenting on the Supreme Court’s decision to suspend the Election Tribunal decision pertaining to NA-154, he said that PPP accepted the verdict of the Apex Court because the Party held Judiciary in the highest esteem.

He, however, pointed out the duplicity of the government as it was earlier saying to go to the voters to seek their fresh mandate and at the same time tried to hide behind Judiciary.

On the issue of seat adjustment, he said that it had been done with PTI, PTI,JI in districts Okara, Shaikhupura, Gujramwala and Faisalabd as a first stage adding the second stage would be regarding the elections of the Chairmen. He expressed the hope that the Opposition Parties would give tough time to the ruling party by electing the top slots collectively.

He said that in today’s meeting of the PPP chapter of Lahore, it was decided to nominate office bearers and PPP stalwarts to lunch aggressive campaign in NA-122 and PP-147 by going door to door and holding series of corner meetings in the constituency.

Those who were nominated in Union councils for the purpose included Haji Aziz-ur- Rehamn Chan(31) Haq Nawaz Khan(32) Amir Suhail But(33), Zahid Zulfiqar(54) Senator Kazim Khan(75), Iftikhar Shahid(76), Omar Missbah-ur- Rehman(78), Abid Siddique(96),Mian Ayhub(93), Mian Khalid Saeed(94 and 100), Mian Waheed(101), Naveed Chaudhry(102 and 103), Mian Kashif Hassan(105), Suhail Milk(106),Aslam Gill and Dr. Khayyam Hafeez(107).

The meeting which was held under the chair of Mian Manzoor Ahmed Wattoo was attended by Tanvir Ashraf Kaira,Samia Gurkhi, Zahid Zilfiqar, Rana Asher, Barrister Amir Hassan, Haji Aziz-ur- Rehman Chan, Aslam Gill, Raja Amir, Abid Siddique, Ghulan Fraid Kathia, Chaudhry Naeem-ul-Hassan, Ex- MNA, Naveed Chaudhry,Abdul Waheed, Mian Ayub Rana Gul Nasir, Dr. Khayyan Hafeez, Ashraf Bhatti, Haq Nawaz Khan, Maulana Yousuf Awan and representative of Allied Wings of PPP.

پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو نے کہاکہ الیکشن کمیشن نے انکے کئی بار مطالبہ کرنے کے باوجود پنجاب حکومت کے افسران کو ریٹرننگ آفیسرز لگا دیا ہے، ریٹرننگ آفیسرز عدلیہ سے لئے جائیں کیونکہ پنجاب حکومت کے ریٹرننگ آفیسرز کی زیرنگرانی انتخابات آزادانہ اور منصفانہ ہونا ناممکن ہے، ایم این اے اور ایم پی اے کے کہنے پر ترقیاتی سکیمیں مکمل کی جارہی ہیں تاکہ حکومتی امیدواروں کے لیے ووٹ حاصل کئے جا سکیں۔ انہوں نے یاددلایا کہ پیپلز پارٹی کے دور میں الیکشن کمیشن نے ہر قسم کی ترقیاتی سرگرمی پر چھ مہینے پہلے ہی پابندی لگا دی تھی جس پر پوری طرح عمل ہوا۔ ان خیالات کااظہا رانہوں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ۔انہوں نے کہا کہ یہ ایک جعلی پیکج ہے جس کا الیکشن کمیشن کو نوٹس لینا چاہیے کیونکہ یہ انتخابی قوانین کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے جبکہ الیکشن شیڈول کا اعلان کیا جا چکا ہے۔ انہوں نے الیکشن کمیشن کی طرف سے آرمی اور رینجرز کی آئندہ ہونیوالے ضمنی انتخابات میں تعیناتی کا پھر خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایک مستحسن فیصلہ ہے جس سے انتخابی عمل احسن طریقے سے مکمل ہو گا۔انہوں نے سپریم کورٹ کے فیصلے این اے۔ 154 پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم اعلیٰ عدلیہ کے فیصلے کو عزت کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس سے حکمرانوں کی دوغلی پالیسی واضح ہو گئی ہے کیونکہ ایک طرف تو یہ کہتے ہیں کہ ووٹر کے پاس جا کر ان سے فیصلہ لیں گے اور دوسری طرف وہ راہِ فرار اختیار کرتے ہیں۔مقامی حکومتوں کے امیدواروں کی ٹکٹوں کے بارے میں انہوں نے کہا کہ انکی بڑی تعداد کی تقسیم پارٹی کے امیدواروں کے درمیان مکمل ہو چکی ہے اور باقی جلد ہی مکمل ہو جائے گی۔ آج کی میٹنگ کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی این اے۔122اور پی پی ۔147کے امیدوار بیرسٹر عامر حسن اور افتخار شاہد ہیں اور انکی انتخابی مہم چلانے کے لیے پارٹی عہدیداروں کو ذمہ داریاں سونپی گئی ہیں جسکے تحت وہ ڈور ٹو ڈور جائیں گے اور اسکے علاوہ کارنر میٹنگز بھی کریں گے۔جن کی ڈیوٹیاں لگائی گئی ہیں ان میں یو سی۔31، حاجی عزیز الرحمن چن، یوسی۔32حق نواز خان، یوسی۔33عامر سہیل بٹ ،یوسی۔54زاہدذوالفقار،یوسی۔75سینٹیر کاظم، نقوی ،یوسی۔76افتخار شاہد،یوسی۔78عمر مصباح رحمان،یوسی۔96عابد صدیقی،یوسی۔93میاں ایوب،یوسی ۔94میاں خالد سعید ،یوسی۔100میاں خالد سعید،یوسی۔101میاں وحید،یوسی۔102-3نوید چوہدری،یوسی۔105میاں کاشف حسن،یوسی۔106سہیل ملک،یوسی۔107اسلم گل، ڈاکٹرخیام حفیظ شامل ہیں۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ پیپلز پارٹی نے پی ٹی آئی، پی اے ٹی، جماعت اسلامی کے ساتھ مل کر گوجرانوالہ، شیخوپورہ، اوکاڑہ، فیصل آباد اور دوسرے ضلعوں میں سیٹ ایڈجسٹمنٹ مکمل کر لی ہے جو کہ پہلا مرحلہ ہے۔ دوسرے مرحلے میں ان پارٹیوں کے ساتھ مل کر چیئرمین منتخب کئے جائیں گے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ اس کے تحت پنجاب میں اپوزیشن پارٹیاں حکومتی پارٹی کو ٹف ٹائم دیں گی۔

Bilawal Bhutto Zardari condemns the arrest of PPP Balochistan leader Ali Maddad Jattak

KARACHI, September 30: Bilawal Bhutto Zardari Chairman Pakistan Peoples Party has condemned the arrest of PPP Balochistan leader and former Provincial Minister Ali Maddad Jattak and termed it as victimization on the Balochistan government.
In a press statement, the PPP Chairman said that it was strange that armed men attacked Ali Maddad Jattak in Quetta but Balochistan coalition government arrested him instead of those mounted the attack.
“It is sheer victimization against PPP workers of Balochistan and Party and its leadership won’t tolerate such tactics,” he added and demanded immediate release of Ali Maddad Jattak and arrest of those involved in the attack on PPP leader.

اختیارات کے غلط استعمال کے الزام بھی جھوٹے ثابت ہوں گے۔ راجہ پرویز اشرف

CQH7C1sUEAENopl

سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف نے کہا ہے کہ رینٹل پاور پلانٹ کا الزم لگانے والے اب خود ہی ان منصوبوں کو درست قرار دے رہے ہیں۔ جو کام پیپلز پارٹی کرے وہ غلط لیکن جو مسلم لیگ (ن) کرے وہ درست ہے۔
سابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف نے کہا ہے کہ مجھ پرمالی بدعنوانی نہیں اختیارات کے غلط استعمال کا الزام ہے ،یہ الزام بھی جھوٹے ثابت ہوں گے ۔
رینٹل پاور کیس میں اسلام آباد کی احتساب عدالت میں پیشی کے موقع پر میڈیا سے گفتگو میں انہوں نے کہا کہ الزامات لگانے سے پہلے تحقیقات ہونی چاہیے۔
راجہ پرویز اشرف کا مزید کہنا تھا کہ ینٹل پاور کے معاملے پرخواجہ آصف میرے خلاف سپریم کورٹ گئے، اب وہ وزیرپانی وبجلی ہیں اور کابینہ نے رینٹل پاور کی منظور دیدی ،بات یہ ہے کہ جو کام ہم کریں تو غلط اور وہ کریں تو درست ہے۔
احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم رراجہ پرویز اشرف کیخلاف سمندری رینٹل پاور ریفرنس کی سماعت 9 اکتوبر تک ملتوی کر دی