پاکستان پیپلزپارٹی کی مرکزی رہنما ڈاکٹر سیدہ نفیسہ شاہ کی راجہ عامر خان کی رہائشگاہ پر ہیومن رائٹس ونگ پنجاب اور لاہور کے عہدیداران سے ملاقات

DSC_0361

پاکستان پیپلزپارٹی کی مرکزی رہنما ڈاکٹر سیدہ نفیسہ شاہ نے کہا ہے کہ ہم پیپلز پارٹی کو لاہور میں بنیاد بناکر اس کو دوبارہ قوت عطا کریں گے۔ پیپلز پارٹی کے کارکن پارٹی کا سرمایہ ہیں جہا ں پارٹی لیڈروں پر کوئی زمہ داری عائد ہوتی ہے وہاں کچھ ذمہ داری کارکنوں پر بھی عائد ہوتی ہے۔ہمارے پاس نوجوان قیادت ہے۔ہم انسانی حقوق کی تنظیم کو گلی محلوں کی سطح پر منظم کریں گے تاکہ لوگوں کے حقوق کی پامالی کو روکا جاسکے اور ان کو بنیادی حقوق سے آگاہی حاصل ہو۔ ہم پہلے کی طرح عوام کی خدمت کریں گے ہمارے دروازے ہر وقت عوام کی خدمت کے لیے کھلے ہیں وہ پاکستان پیپلز پارٹی پنجاب کے سیکرٹری اطلاعات راجہ عامر خان کی رہائشگاہ پر ہیومن رائٹس ونگ پنجاب اور لاہور کے عہدیداران، ممبران اور سوشل میڈیا کے عہدیداران سے گفتگو کررہیں تھیں۔
پاکستان پیپلز پارٹی پنجاب کے سیکرٹری اطلاعات راجہ عامر خان کی رہائشگاہ پر وزیراعلیٰ سندھ قائم علی شاہ کی صاحبزادی نفیسہ شاہ ایم این اے نے ایک تقریب میں خصوصی شرکت کی۔اس موقع پر پیپلز پارٹی پنجاب کے جنرل سیکرٹری تنویر اشرف کائرہ اور ہیومن رائٹس ونگ پنجاب کے صدر آصف خان اور لاہور کے عہدیداران منظور مانیکا ،میاں وحید ، نصیر احمد،فضل الرحمن بٹ ، سوشل میڈیا کے کوارڈینیٹرجنید قیصر، شہزادی توصیف چیمہ، طارق خٹک اورخرم فاروق نے شرکت کی۔اجلاس میں پیپلز پارٹی ہیومن رائٹس ونگ کوفعال بنانے کے لئے نفیسہ شاہ نے شرکاء سے تجاویز حاصل کئیں۔اجلاس میں پیپلز پارٹی پنجاب کے انفارمیشن سیکرٹری راجہ عامر خان نے کہا اگر اس وقت پاکستان میں کوئی لیڈر ہے تو وہ بلاول بھٹو ہے۔انھوں نے کہا پیپلز پارٹی نے ان انتخابات میں خاطر خواہ کامیابی حاصل نہ کر سکی مگر مستقبل پیپلز پارٹی کا ہے کیونکہ اگلے انتخابات میں نوجوانوں نے اہم کردار ادا کرنا ہے اجلاس کے اختتام پر نفیسہ شاہ نے کیا پیپلز پارٹی کا ارتقاء لاڑکانہ سے ہوا ہے لیکن اس کی بنیاد لاہور میں رکھی گئی اوریہیں سے اس کا نظریاتی سفر شروع ہوا۔ اس لئے ہم پیپلز پارٹی کو لاہور میں بنیاد بناکر اس کو دوبارہ قوت عطا کریں گے۔ پیپلز پارٹی کے کارکن پارٹی کا سرمایہ ہیں جہا ں پارٹی لیڈروں پر کوئی زمہ داری عائد ہوتی ہے وہاں کچھ ذمہ داری کارکنوں پر بھی عائد ہوتی ہے۔ہمارے پاس نوجوان قیادت ہے۔ہم انسانی حقوق کی تنظیم کو گلی محلوں کی سطح پر منظم کریں گے تاکہ لوگوں کے حقوق کی پامالی کو روکا جاسکے اور ان کو بنیادی حقوق سے آگاہی حاصل ہو۔ ہم پہلے کی طرح عوام کی خدمت کریں گے ہمارے دروازے ہر وقت عوام کی خدمت کے لیے کھلے ہیں۔ حکومت کی دہشتگردی کیخلاف حکمت عملی واضح نہیں۔جن ملکوں سے طالبان کو فنڈنگ ہوتی ہے ان سے ن لیگ کے روابط ہیں۔ دہشتگردی کے خاتمے کیلیے ن لیگ طالبان سے بات چیت کرے۔ ہم نے دہشتگردی کے خاتمے کیلیے بہت کارروائیاں کیں۔ انتخابات میں تین بڑی سیاسی جماعتوں کو دہشت گردی کا سامنا تھا اور دھمکیاں مل رہی تھیں جس کی وجہ سے ہماری انتخابی مہم متاثر ہوئی اور آزادانہ مہم نہیں چلاسکے۔اس کے باوجود بھی پیپلزپارٹی نے سندھ میں نمایاں کامیابی حاصل کی ہے . بجٹ کے حوالے سے انھوں نے کہاکہ یہ آئی ایم ایف کا بجٹ ہے،عوامی ہر گز نہیں ۔ہماری حکومت کی پہلی ترجیح آئی ایم ایف کاکشکول توڑنا تھی جو ہم نے کیا لیکن نئی حکومت کشکول ہاتھ میں لینے جارہی ہے۔ملازمین کی تنخواہوں میں کم اضافہ کر کے ظلم کیا گیا۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s