ن لیگ کا منشور سراسر فریب پر مبنی ہے: میاں منظوروٹو

379690_362792607160900_1425807458_n

پیپلز پارٹی پنجاب کے صدر میاں منظور احمد وٹو نے کہا ہے کہ مسلم لیگ ن کا منشور سرا سر فریب پر مبنی ہیں۔

لاہور: میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ پنجاب میں ترانوے لاکھ افراد کو ملازمتیں دینے کے مواقع ہی نہیں پنجاب حکومت عوام کو انتخابی منشور کے نام پر دھوکہ دے رہی ہے۔ میاں منظور احمد وٹو نے کہا کہ مسلم لیگ ن کے انتخابی منشور کے نکات حقائق کے برعکس ہیں۔ عوام تصوراتی نعروں کے فریب میں نہیں آئیں گے۔ سرکاری وسائل مسلم لیگ ن کی انتخابی مہم کے لئے استعمال ہو رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نون لیگ کو عام انتخابات میں شکست سے کوئی نہیں بچا سکتا۔

میاں منظور احمد وٹو نے وزیراعلیٰ پنجاب کے اجالا پروگرام کو ان کے ناکام منصوبوں میں سے ایک اور ناکام منصوبہ قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ن لیگ کا انتخابی منشور معروضی حقائق سے متضاد عوام کیلئے ایک اور سبز باغ ہے مسلم لیگ ن قائدین کی جانب سے ہر خاندان کے ایک فرد کو سرکاری ملازمت دینے کا اعلان محض لالی پاپ اور کھلا دھوکہ ہے۔ پنجاب کے کم و بیش 93 لاکھ گھرانوں کیلئے 93 لاکھ سرکاری ملازمتوں کو نہ تو گنجائش ہے۔ شریف برادران کے پاس ایسا کون سا الہ دین کا چراغ ہے جس سے وہ اپنے نئے انتخابی نعرے کو عملی جامہ پہنا سکیں گے۔ انہوں نے کہا کہ شمسی توانائی لیمپس بانٹنے کے نام پر پنجاب کے حکمران تعلیمی فنڈز کا ناجائز استعمال کر رہے ہیں۔

Advertisements

الیکشن کا سائرن بج گیا، اصل لڑائی پنجاب میں ہو گی: میاں منظور احمد وٹو

Press conference 28 January

منڈی بہاﺅالدین (نامہ نگار) پیپلزپارٹی پنجاب کے صوبائی صدرمیاں منظور احمد وٹو نے کہا ہے کہ ملک میں انتخابات کا سائرن بج چکا ہے، اصل لڑائی پنجاب میں ہوگی، زرداری کی سیاست سمجھنے کیلئے میاں برادران کو پی ایچ ڈی کرنا ہو گی، پنجاب حکومت نے 72 ارب کا بجٹ لاہورکی سڑک میں ڈبو دیا ہے، وہ یہاں منڈی بہا¶الدین کے نواحی گاوں سوہاوہ میں سوئی گیس کی فراہمی کے منصوبے کے افتتاح کے بعد جلسہ عام سے خطاب کر رہے تھے۔ میاں منظور وٹو نے کہا کہ پیپلزپارٹی نے گذشتہ انتخابات میں منڈی بہا¶الدین سے دو قومی اور پانچ صوبائی اسمبلی کی نشستیں جیتی ہیں اور آئندہ کے انتخابات میں بھی مسلم لیگ ن کو اس ضلع سے ناکامی کا منہ دیکھنا پڑے گا۔ خادم اعلیٰ کی گڈگورننس کی یہ حالت ہے کہ جتنے لوگ جعلی ادویات، کف سیرپ، ڈینگی سے مارے گئے ہےں اتنے ڈرون حملوں میں بھی نہیں مارے گئے، پنجاب میں ڈاکودن دیہاڑے لوٹ مارکر رہے ہیں، پنجاب میں عدم تحفظ کی فضاءقائم ہے۔ انہوں نے کہاکہ (ن) لیگ والے اسلام آباد میں دھرنا دینے کا فیصلہ واپس لے لیں گے۔ جنوبی پنجاب کاصوبہ عوامی خواہشات اور کمشن کی رپورٹ کے مطابق بنائیں گے۔ پنجاب کے عوام کی خواہشات کااحترام کرتے ہوئے مخالفت بندکر دے، پنجاب کی مقامی آبادیوں پر خرچ ہونے والے لوکل باڈیزکے فنڈز ایم پی اے، ایم این اےزخرچ کر رہے ہیں، چیف جسٹس اس پری پول رگنگ اور دھاندلی کا ازخود نوٹس لیں۔ انہوں نے کہاکہ میاں برادران کو اربوں روپے کے بڑے منصوبے بنانے کا شوق ہے اور لوگوں میں اس پر چہ مگوئیاں ہیں، پیپلزپارٹی نے آج تک کوئی انتقامی کارروائی نہیں کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت سنجیدگی سے بجلی اور گےس کے معاملات کو بہتر کرنے کے اقدامات کر رہی ہے۔

PML-N’s demand to remove governors is absurd: Mian Manzoor Wattoo

* PPP Punjab president says governors won’t have role in establishment of caretaker govt

798298_10200376953897466_1230720271_o

LAHORE: Federal Minister for Kashmir and Gilgit-Baltistan Affairs and PPP Punjab President Mian Manzoor Ahmed Wattoo has said that the Pakistan Muslim League-Nawaz’s (PML-N’s) demand to sack all governors is “ridiculous”.

Addressing a press conference, Wattoo said that a governor was not an executive authority, “it is the chief minister instead”. The governor will not have an executive authority even in the caretaker set-up, he added.

He said that the party that declared Dr Tahirul Qadri’s sit-in unconstitutional had itself brought a sit-in resolution, adding, “I hope the N-League will backtrack from its decision to stage a sit-in.”

He said that the PML-N’s decision to stage a sit-in was an ‘interference’ in provincial autonomy.

The PPP Punjab president said the PML-N was sincere with neither South Punjab nor Bahawalpur, and in contrast, the PPP was serious and sincere with the establishment of the province. “It is very difficult for the people of Rajanpur to come to Lahore for resolution of their problems.”

Wattoo also ruled out any delay in general election, saying that polls would be held on time.

He said the Pakistan People’s Party would hold talks with all political parties, including Tahirul Qadri.

He clarified that governors would have no role in the establishment of the caretaker set-up.

 

دھرنے کے فیصلے سے مایوسی ہوئی،منظور وٹو

پیر کو لاہور میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے پیپلز پارٹی کے صوبائی صدر نے کہا کہ چاروں صوبوں کے گورنرز کی تبدیلی کا مطالبہ مضحکہ خیز ہے۔

انہوں نے کہا کہ تحریک منہاج القرآن کے دھرنے کو غیر آئینی قرار دینے والی نون لیگ خود دھرنا دینے کا اعلان کر رہی ہے۔

انہوں نے دھرنے کے فیصلے کو مایوس کُن قرار دیتے ہوئے کہا کہ اسمبلیاں تحلیل کرنے کے حوالے سے فیصلہ اتفاق رائے سے کیا جائے گا۔

منظور وٹو نے کہا کہ گورنر ہٹانے کا مطالبہ درست نہیں، نگران سیٹ اپ میں بھی  گورنروں کے پاس اتھارٹی نہیں ہوگی۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ پاکستانی قیادت جمہوریت پرمتفق ہے اور اس کا تسلسل آئندہ بھی برقرار رہے گا۔